پاکستان اور بھارت کی کرکٹ ٹیمیں آئندہ فیوچر ٹورز پروگرام میں چھ بار مدمقابل ہوں گی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد کے مطابق 2015 سے 2023 کے درمیانی عرصے میں آئی سی سی کے فیوچر ٹورز پروگرام میں پاکستان اور بھارت کے درمیان چھ دورے رکھے گئے ہیں جن میں سے چار کی میزبانی پاکستان کرے گا۔

ان چھ دوروں میں مجموعی طور پر 14 ٹیسٹ 30 ون ڈے اور 12 ٹی ٹوئنٹی میچ شامل ہوں گے۔

سبحان احمد کا یہ بھی کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ اور بی سی سی آئی کے درمیان ان چھ دوروں کے بارے میں مفاہمت کی یادداشت پر دستخط ہو چکے ہیں اور پاکستان کرکٹ بورڈ آئی پی ایل کے بعد بھارتی کرکٹ بورڈ سے ان دوروں کی تفصیلات کے بارے میں بات کرے گا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کو توقع ہے کہ ان دوروں کو یقینی بنانے کے لیے قانونی معاہدے بھی ہو جائیں گے۔

واضح رہے کہ آئی سی سی میں بگ تھری کے غلبے کے بعد آسٹریلیا، بھارت اور انگلینڈ نے دیگر ممالک کی حمایت حاصل کرنے کے لیے ان سے مختلف اوقات میں سیریز کھیلنے کی پیشکشیں کی تھیں۔

پاکستان بگ تھری کی حمایت کرنے والا سب سے آخری ملک تھا۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان ہونے والی کرکٹ دونوں ملکوں کی حکومتوں کی اجازت سے مشروط رہی ہے۔

بھارتی ٹیم نے آخری بار 2008 میں ایشیا کپ کھیلنے کے لیے پاکستان کا دورہ کیا تھا۔

2009 میں سری لنکن ٹیم پر حملے کے بعد سے کوئی بھی غیر ملکی ٹیم پاکستان نہیں آئی ہے۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم نے 13 - 2012 میں بھارت کا مختصر دورہ کیا تھا جس میں اس نے تین ون ڈے اور دو ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلے تھے۔

login with social account

12.png

Images of Kids

Events Gallery

Currency Rate

/images/banners/muzainirate.jpg

 

As of Mon, 20 Nov 2017 14:43:04 GMT

1000 PKR = 2.869 KWD
1 KWD = 348.590 PKR

Al Muzaini Exchange Company

Go to top